جادوئی آئینہ

نائلہ تیسری جماعت کی ایک پیاری سی بچی تھی۔وہ پڑھائی کے علاوہ بااخلاق بھی تھی۔جادوئی کہانیاں پڑھنا اسے بہت پسند تھا۔
ایک دن نائلہ ایک جادوگر کی کہانی پڑھ رہی تھی جس کے پاس جادوئی آئینہ تھا۔

اس کے ذریعے دنیا میں ہر جگہ دیکھا جا سکتا ہے۔نائلہ نے سوچا کاش اس کے پاس بھی یہ جادوئی آئینہ ہوتا جو اس کے ہر کام کر دیتا۔نائلہ کے ابو اس کی پسند کو جانتے تھے،چنانچہ وہ اس کے لئے ایک پتلا چپٹا سا کالے رنگ کا آئینہ لے آئے۔

آئینہ اتنا چھوٹا تھا کہ اس کی فراک کی جیب میں بھی آ جاتا تھا۔نائلہ بہت خوش ہوئی۔اس نے آئینے کو ایک چھوٹے سے غلاف میں رکھ دیا جو اس کے ساتھ ہی تھا۔نائلہ کسی کام میں مصروف تھی کہ اچانک ابو کمرے میں داخل ہوئے اور نائلہ سے جادوئی آئینہ مانگا۔

نائلہ نے وہ آئینہ انھیں دیا تو انھوں نے کہا:”یہ ٹچ موبائل کہلاتا ہے،یہ کسی جادو کے آئینے جیسا ہی ہے۔“یہ سن کر نائلہ حیران رہ گئی۔

ابو نے نائلہ کو موبائل استعمال کرنے کا طریقہ سمجھایا۔انھوں نے یہ بھی بتایا کہ اسے ذرا سا چھونے سے ہم دنیا کے کونے کونے تک پہنچ سکتے ہیں اور جو بھی سوال لکھ کر پوچھو اس کا جواب فوراً مل جائے گا۔

اس میں موجود یوٹیوب میں ہم مختلف اقسام کے کارٹونز اور فلمیں وغیرہ بھی دیکھ سکتے ہیں۔نائلہ اپنی اس بڑی خواہش پوری ہو جانے پر بہت خوش ہوئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں