ہزارہ کا تیسرے دن بھی کوئٹہ کا دھرنا جاری ہے ، ان کا کہنا ہے کہ وہ مقتول کان کنوں کے لئے انصاف کے بغیر دھرنا نہیں چھوڑیں گے.

ہزارہ برادری کے ممبران جنہوں نے کوئٹہ میں مقتول کوئلہ کانوں کی لاشوں کے ساتھ کوئٹہ میں ایک شاہراہ بلاک کردی ہے ان کا کہنا ہے کہ جب تک وزیر اعظم عمران خان ان سے ملاقات نہیں کرتے اور قاتلوں کو انصاف کے کٹہرے میں نہیں لاتے ہیں وہ پیچھے نہیں ہٹیں گے۔

مسلح حملہ آوروں نے اتوار کے روز بلوچستان کے مچھ کوئلہ فیلڈ ایریا میں ایک کان سائٹ کے قریب رہائشی کمپاؤنڈ میں 11 کان کنوں کے گلے کاٹ دیئے ، جس سے یہ سارا واقعہ فلمایا گیا اور بعد میں اسے آن لائن پوسٹ کیا گیا۔ اس بھیانک حملے کی ذمہ داری عسکریت پسند اسلامک اسٹیٹ (آئی ایس) گروپ نے قبول کی تھی۔

اس کے بعد ہزاروں نے کوئٹہ کے مغربی بائی پاس علاقے میں تابوتوں کا بندوبست کرتے ہوئے ایک احتجاجی مظاہرہ کیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں