خیرپور میں نابالغ لڑکی کے ریپ کے قتل کے بعد 9 مشتبہ افرادکو گرفتار کرلیا گیا.

سندھ کے ضلع خیرپور میں ایک نو سالہ بچی کی لاش جس کے ساتھ زیادتی کی گئی تھی اور گلا دبا کر قتل کیا گیا تھا. پولیس نے منگل کو نو مشتبہ افراد کو حراست میں لیا۔

خیرپور پولیس کے مطابق ، پیر جو گوٹھ کے قریب لانگ خان لاریک کی رہائشی ، نابالغ لڑکی 9 جنوری کو لاپتہ ہوگئی تھی اور پیر کی صبح اس کی لاش اس کے گھر کے قریب کیلے کے باغ میں ملی تھی۔

سکھر رینج کی ڈپٹی انسپکٹر جنرل (ڈی آئی جی) فدا حسین مستوئی نے بتایا کہ متاثرہ اپنی رہائش گاہ سے تقریبا ایک کلومیٹر کے فاصلے پر واقع مکان میں گھریلو ملازمہ کا کام کرتی تھی۔

افسر نے بتایا کہ اس کا والد موٹرسائیکل رکشہ ڈرائیور ہے اور اس کے آٹھ بچے ہیں۔پولیس نے اب تک نو مشتبہ افراد کو حراست میں لیا ہے۔

پولیس حکام لیاقت یونیورسٹی آف میڈیکل اینڈ ہیلتھ سائنسز کی فارنزک اینڈ مولیکولر بیالوجی لیبارٹری میں کئے گئے تمام ملزمان کے ڈی این اے ٹیسٹ حاصل کریں گےاور پھر واقعے کا مقدمہ درج کیا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں